171

آزاد کشمیر حکومت کا 2 ہفتوں کے لئے سخت لاک ڈاؤن کرنے کا فیصلہ

سخت لاک ڈاؤن کے دوران میڈیکل سٹور، دودھ اور سبزی کی دکانیں کھلی رہیں گی، وزارت داخلہ آزاد جموں وکشمیر نے نوٹیفکیشن جاری کر دیا
آزاد کشمیر میں حکومت نے لاک ڈاؤن میں نرمی کو ختم کرتے ہوئے آئندہ 2 ہفتوں کے لئے لاک ڈاؤن میں سختی کا فیصلہ کر لیا ہے۔ اس حوالے سے وزارت داخلہ آزاد جموں وکشمیر نے نوٹیفکیشن جاری کر دیا ہے جس کے مطابق نرمی کو ختم کر کے سختی سے لاک ڈاؤن پر عمل کیا جائے گا۔ بتایا گیا ہے کہ لاک ڈاؤن میں صرف میڈیکل سٹور، دودھ اور سبزی کی دکانیں کھلی رہیں گی جبکہ باقی ہر قسم کا کاروبار کرنے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔
حکام کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ آزاد کشمیر میں کورونا وائرس میں مبتلا مریضوں کی بڑھتی ہوئی تعداد اور بازاروں میں خریداروں کے رش کے باعث لاک ڈاؤن سخت کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ چین کے شہر وہان سے شروع ہونے والے کورونا وائرس نے اس وقت پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لیا ہوا ہے جس کے بعد ہر گزرتے دن کے ساتھ کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے
پاکستان میں بھی کورونا وائرس نے اپنے قدم جما لئے ہیں جس کے بعد یہاں بھی ہر طرف لوگوں میں اس کا خوف پایا جا رہا ہے۔ جہاں حکومت نے ملک بھر میں جاری لاک ڈاؤن میں نرمی کر دی ہے، وہاں ہی آزاد کشمیر میں کیسز کے بڑھنے کے بعد مقامی حکومت نے لاک ڈاؤن میں سختی کا فیصلہ کر لیا ہے۔ اس حوالے سے وزارت داخلہ آزاد جموں وکشمیر نے نوٹیفکیشن جاری کر دیا ہے جس کے مطابق نرمی کو ختم کر کے سختی سے لاک ڈاؤن پر عمل کیا جائے گا۔
بتایا گیا ہے کہ لاک ڈاؤن میں صرف میڈیکل سٹور، دودھ اور سبزی کی دکانیں کھلی رہیں گی جبکہ باقی ہر قسم کا کاروبار کرنے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ خیال رہے کہ پاکستان میں اس وقت متاثرہ افراد کی تعداد54 ہزار تک پہنچ گئی جبکہ ایک دن میں 37 افراد جاں بحق ہوگئے جس کے بعد اموات کی تعداد 1100 کے قریب ہو چکی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں